سعودی عرب: خواتین وکلاء کی تعداد میں 240 فیصد اضافہ

0
164
women lawyers

ریاض: سعودی عرب کی وزارت انصاف نے گزشتہ تین سال کے دوران میں خواتین وکلاء کو ریکارڈ تعداد میں لائسنس جاری کیے ہیں اور لائسنس حاصل کرنے والی خواتین کی تعداد میں 240 فیصد اضافہ ہوا ہے۔

عرب میڈیا کے مطابق وزارت انصاف کی جانب سے لائسنس کے اجرا کے آغاز کے بعد پہلے سال خواتین کو دس لائسنس جاری کرنے کی منظوری دی گئی تھی تاہم رواں سال اب تک 95 لائسنس جاری کیے جاچکے ہیں۔

ایک معروف سعودی وکیل راندہ حسین عارف نے کہا ہے کہ زیر تربیت خواتین وکلاء کی پیشہ ورانہ اہلیت میں اضافہ ہوا ہے سعودی خواتین مسلسل مختلف شعبوں میں نمایاں کارکردگی کا مظاہرہ کررہی ہیں۔

راندہ عارف کے مطابق خواتین کی عدالتوں اور لاء دفاتر میں موجودگی سے نمایاں تبدیلی دیکھنے میں آئی ہے، خواتین کی بڑی تعداد اب قانون کے موضوعات پر مضامین بھی لکھ رہی ہے۔

سعودی وزیر انصاف اور سپریم جوڈیشل کونسل کے صدر نے کہا ہے کہ سعودی خواتین کو بااختیار بنانے میں اہم اقدامات کیے ہیں، انہوں نے خواتین کو وکالت کے مصدقہ لائسنس کے حصول کے لیے ہدایات جاری کی تھیں۔

واضح رہے کہ سعودی ویژن 2030ء کے تحت خواتین کے لیے ملازمتوں کے بھی نئے نئے مواقع پیدا ہورہے ہیں اور انہیں مختلف شعبوں میں نمائندگی دی جارہی ہے۔

خواتین پر 24 جون سے ڈرائیونگ کی پابندی کے بعد ان کے لیے روزگار کے مواقع پیدا ہوں گے اور توقع کی جارہی ہے کہ 2020ء تک بیس لاکھ خواتین سعودی سڑکوں پر کاریں چلا رہی ہوں گی۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں‘ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

The post سعودی عرب: خواتین وکلاء کی تعداد میں 240 فیصد اضافہ appeared first on ARYNews.tv | Urdu – Har Lamha Bakhabar.