شوہر پاکستانی اور بیوی افغانی

0
42

شوہر پاکستانی اور بیوی افغانی، پشاور ہائی کورٹ نے سیکرٹری انٹیریئر منسٹری کو بیوی کو سیٹیزن شپ دینے کے احکامات جاری کر دیئے۔

محمد الیاس نے پشاور ہائی کورٹ میں سیف اللہ محب کاکا خیل ایڈووکیٹ کی وساطت سے رٹ پیٹیشن دائر کی جس میں یہ موقف اپنایا گیا کہ میری بیوی افغانی ہے اور ہماری شادی 2017 میں ہوئی۔ میں نے انٹیریئر منسٹری کے کافی چکر لگائے پر میرے فارم کو پروسیس نے کیا گیا۔ اور نہ ہی کوئی وجہ بتائی گئی کہ آخر کیوں سیٹیزن شپ سے محروم کیا جا رہا ہے میری بیوی کو۔

انکے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ سیٹیزن شپ ایکٹ کے مطابق اگر شوہر پاکستانی ہو اور بیوی غیر ملکی تو وہ پاکستانی سیٹیزن شپ کی حق دار بن جاتی ہے۔

انہوں نے بتایا کہ انہیں ویژہ ایکسپائر ہونے کے بعد پاک افغان بارڈر پر انٹری ایگزیکٹ کرنا ہوتا ہے اور اس سے انکی زندگی میں کافی مشکلات ہیں۔

جسٹس روح ال امین اور جسٹس اشتیاق ابراہیم پر مشتمل بینچ نے سیکرٹری انٹیریر منسٹری کو احکامات جاری کیے کہ تین ماہ کے اندر اندر کیس پروسیس کیا جائے اور ان سے فارم کے کر اپنی کارروائی مکمل کر کے محمد الیاس کی اہلیہ کو پاکستانی سیٹیزن شپ دی جائے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here